41

جعلی ادویات کی فیکٹریاں حکومت کیساتھ ساتھ مریضوں کیلئے بھی لمحہ فکریہ

سرگودھا (بیوروچیف) ملک بھر میں 3 ہزار سے زائد جعلی ادویات کی فیکٹریاں حکومت کیسا تھ ساتھ مریضوں کیلئے لمحہ فکریہ ہیں جہاں پر د و لت کے پجاری انسانی زندگیوں کیلئے غیر معیاری ادویات بنا سکتے ہیں وہاں پر یہ ملک کیلئے کچھ بھی کہلواڑ کرسکتے ہیں ان میں سے اکثر فیکٹریاں ایسے لوگوں کی ہیں جو بااثر اور حکومتوں میں اثر و رسوخ رکھتے ہیں ان خیالات کا اظہار انجمن تاجران بلاک نمبر 2 سرگودھا کے صدر میاں محمد عمران نے اپنے ایک بیان میں کیا انہوں نے کہا کہ اگر حکومت ان تین ہزار جعلی ادویات تیار کر نیوالی فیکٹریوں کیخلاف کاروائی کرے تو اسکے خا طر خواہ نتائج سامنے آسکتے ہیں رپورٹس کے مطا بق 35 فیصد موجودہ و سابق ارکان اسمبلی کی یہ فیکٹریاں ہیں میاں محمد عمران نے کہا کہ جس ملک میں خالص دوائی’ دودھ’ سبزیاں’ دالیں’ فروٹس ا و ر اسی طرح دیگر اشیاء عوام کو میسر نہ ہوں وہاں پر عو ا م کا اللہ حافظ ہے اس کے ذمہ دار عوام کیساتھ ساتھ خود حکمران بھی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں