26

ساہیوال’سرکاری فری آٹے میں کرپشن ہونے لگی

ساہیوال(بیوروچیف) سرکاری آٹا پوائنٹس پر سادہ لوح عورتوں کے کارڈ سکین کر کے آٹے کے لیے ایک ہفتے کا ٹائم دیا جا رہا ہے جبکہ پہلا تھیلا آٹے کا وقت مقرر ہے اور ایشو کیا جا رہا ہے لیکن اگے مستحق افراد کو نہیں دیا جا رہا سرکاری فری آٹے میں بڑے پیمانے پر کرپشن ہو رہی ہے مستحق افراد مرد خواتین کا کہنا ہے آٹے کے تھیلوں کے ڈھیر پڑے ہیں اور ہمیں اگلے ہفتے کا ٹائم کیوں دیا جا رہا ہے اگلے ہفتے تو ہمیں دوسرا تھیلا آٹا ملنے کا حکومت نے اعلان کر رکھا ہے کہ تین تھیلے آٹا ایک ایک کر کے دس دن بعد ملے گا تو ہمارے ساتھ کیوں ناانصافی کر کے آٹا خرد برد کیا جا رہا ہے شہریوں کی بڑی تعداد کا کہنا ہے کہ فلور ملز مالکان اور سرکاری ملازمین آپس میں ملے ہوے ہیں جو اس درمیانی فاصلے میں کرپشن کر رہے ہیں مسجد شہدا کے گراؤنڈ میں بھاری تعداد میں پڑا ڈھیر آٹے کے تھیلوں کا ہمیں نہیں دیا جا رہا ان ڈھیروں پر بیٹھا کرپٹ عناصر مافیا بن چکا ہے جو شہریوں کے منہ سے نوالہ بھی چھین رہا ہے انھوں نے کمشنر ساہیوال سے نوٹس لینے مطالبہ کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں