31

صنعتکار اور کاروباری برادری حکومت کی ناقص پالیسوں کیخلاف سراپا احتجاج

فیصل آباد(سٹاف رپورٹر)IMF کے دبائو پر ٹیکسٹائل سیکٹر کیلئے بجلی و گیس پر سبسڈی واپس لئے جانے سیلز ٹیکس میںایک فیصد اضافہ اورسٹیٹ بینک کی جانب سے شر ح سود 20 فیصد کرنے پرفیصل آباد چیمبر آف کا مرس اینڈ ا نڈ سٹر ی ،آل پاکستان ملز ایسوسی ایشن ،پاکستان ہو ز ر ی مینو فیکچرز ایسوسی ایشن،آل پاکستان سا ئز نگ انڈسٹری ایسوسی ایشن ،پاورلومز انڈسٹری ایسوسی ا یشن اورپاکستان ہو زری مینو فیکچرز ا یسو سی ایشن ،پاکستان ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن سمیت20سے زائد صنعتی و تجارتی تنظیموں کے سر براہوں اور نمائندوں نے آل پاکستان بیڈ شیٹس اینڈاپ ہولسٹری مینو فیکچررز ایسوسی ایشن کے باہر اوپن ائیر میں قائم احتجاجی کیمپ میں مشتر کہ پریس کانفر نس سے خطاب کیااورٹیکسٹائل سیکٹر بارے حکومت کی زیادتیوں کے خلاف ریلی نکالی اور اپنے مطالبات کی حمایت میں نعرے بلند کئے اور نا اہل و بے حسی کا مظاہرہ کرنے والے وفاقی وزیرکامرس کے فوری استعفے کا مطالبہ کیا۔ قبل ازیںپریس کانفر نس سے خطاب کر تے ہوئے آل پاکستان بیڈ شیٹس اینڈاپ ہولسٹری مینو فیکچررز ایسوسی ایشن کے مر کزی چیئر مین سید عاصم شاہ ،فیصل آباد چیمبر آف کا مرس اینڈانڈسٹری کے صدرڈاکٹرخرم طارق، عارف احسان ملک ،کیپٹن فاروق خان،عمران محمودشیخ ، پاور لومزکے وحیدخالق رامے ، اعجاز ناگرہ ،چوہدری محمد نواز،PHMA کے خواجہ اعجاز،قاسم ضیاء اور دیگر نے پریس کانفرنس کے دوران موجودہ حکومت اوراسکے پالیسی میکروں پر شدید لفظی گولہ باری کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوام کو روزگار فراہم کرنے او ر قیمتی زرمبادلہ لانے والا ٹیکسٹائل سیکٹر ہی ملک کی مستحکم اور پائیدار معیشت کی اساس ہے مگر موجودہ حکومت نے اس سیکٹرکو تباہ کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں