21

معیشت پرمنفی اثرات ‘ حکومتی ریونیو متاثر ہونے کاخطرہ

اسلام آباد(بیوروچیف)غیر ملکی سرمایہ کاروں نے بورڈ آف انوسٹمنٹ اور دیگر ‘ متعلقہ و زارتوں’ کو ان کے منافع کی واپسی میں رکاوٹ سمیت متعدد مسائل کو نظر انداز کرنے پر سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہے ۔ رپورٹ کے مطابق پاکستان میں کام کرنیوالی 200 سے زائد بڑی ملٹی نیشنل کمپنیوں کی نمائندہ تنظیم نے وزیراعظم کو لکھے خط میں کہا گیا ہے کہ وہ گزشتہ 10 ماہ سے اپنے بیر و ن ملک مقیم شیئر ہولڈرز کو ڈیویڈنڈ نہیں بھیج سکے ، جسکی وجہ سے ملک کی ساکھ کو شدید نقصان ہو رہا ہے ۔ملک کے زرمبادلہ کے ذخائر بمشکل ایک ماہ کے درآمدی بل پوراکرنے کے قابل ہیں جس کی وجہ سے حکو مت ڈالر آؤٹ فلو کو روکنے پر مجبور ہے ، اس پابندی سے بیرون ملک مقیم سرمایہ کار بھی متاثر ہو رہے ہیں ۔پاکستان میں اکثر غیر ملکی کمپنیا ں اپنی زیادہ تر مصنو عات، خدمات مقامی ما ر کیٹ میں فروخت کرتی ہیں، یہ فروخت مقامی کر نسی کے حساب سے فروخت کی جاتی ہیں جن کا منا فع بھی روپے میں ہوتا ہے لیکن بعد میں ان کے بیرون ملک اسپانسرز کو منافع کی واپسی عام طور پر ڈالرز میں ہوتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں