19

ملک اپنی تاریخ کے بدترین معاشی بحران کی زد میں ہے

فیصل آباد (سٹاف رپورٹر) ڈویژنل صدرجماعت اسلامی ٹریڈروز ونگ ونامزدامیدوارایم این اے این اے 104رانا محمد سکندراعظم خاں نے کہاہے کہ ملک میں سرمایہ کاری کے راستے بند ہو گئے، پاکستان اپنی تاریخ کے سب سے بدترین معاشی بحران کی زد میں ہے، فیکٹریوں، کارخانوں اور صنعتوں کا پہیہ رک گیا، بازاروں پر ویرانی چھا گئی۔بینکوںکے اعدادوشمار ظاہر کرتے ہیں کہ پاکستان میں بدترین معاشی حالات کی وجہ سے سرمایہ دار اپنا سرمایہ بینکوں میں رکھنے پر مجبور ہیں، ماہرین کے مطابق سخت معاشی حالات کے باوجود بینکوں کے ڈپازٹس میں اضافہ ملک میں سرمایہ کاری اور تجارت کو درپیش چیلنجز کی نشاندہی کرتا ہے۔اعدادوشمار کے مطابق فروری 2023 میں بینکوں کے ڈپازٹس کی مالیت 22 ہزار 900 ارب روپے تک پہنچ گئی ،گزشتہ سال فروری میں بینک ڈپازٹس 19 ہزار 900 ارب روپے کی سطح پر تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں