24

واسا کی ناقص حکمت عملی سے شہری رمضان المبارک میں صاف پانی سے محروم

فیصل آباد (سٹاف رپورٹر) رمضان المبارک کے آغاز پر محکمہ واسا کی ناقص حکمت عملی کھل کر سامنے آ گئی، شہر کے اکثر علاقوں میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی بری طرح متاثر’ شکایات کے باوجود ایم ڈی واسا نے خاموشی اختیار کر لی۔ ذرائع کے مطابق ڈائریکٹر واسا کی طرف سے اعلیٰ حکام کو بتایا گیا کہ شہر کے شرقی حصہ کے رہائشیوں کی شکایات موصول ہو رہی ہیں کہ رمضان المبارک میں پینے کا صاف پانی نہیں آ رہا۔ جس کا مشاہدہ کیا گیا تو شہر کے شرقی حصہ وارث پورہ’ بابر چوک’ علامہ اقبال کالونی واٹر ورکس’ چمڑامنڈی’ ناظم آباد’ پیپلزکالونی نمبر1′ ڈوگر بستی اور مدینہ ٹائون میں بھی پینے کے صاف پانی کی فراہمی بری طرح متاثر ہے اور قلیل تعداد میں بالخصوص نشیبی علاقوں میں پینے کا صاف پانی پہنچ رہا ہے جسکی وجہ سے رمضان المبارک میں شہریوں کو پینے کے صاف پانی کے حصول میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے جبکہ رمضان المبارک کے مقدس ماہ کے دوران سحری اور افطاری کے اوقات میں پانی کی سپلائی کو بڑھانا چاہیے اور لوگوں کی ضروریات کے مطابق پینے کے صاف پانی کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے جبکہ فرانس کے منصوبے کے تحت پانی کی فراہمی میں کمی ہو رہی ہے اور مذکورہ علاقوں میں گزشتہ ایک ماہ سے دو وقت کی بجائے صرف ایک گھنٹہ پینے کا صاف پانی فراہم کیا جا رہا ہے۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ شہر کے ایسٹ ڈویژن میں تمام ٹیل اینڈز پر بائی پاس سپلائی بالکل بھی نہیں آ رہی ہے اور تمام ٹینکیوں پر بھی بائی پاس سپلائی موصول نہ ہو رہی ہے اور رمضان المبارک کے دوران سحری اور افطاری کے اوقات کار کا دورانیہ بڑھ جاتا ہے۔ لہٰذا اگر بائی پاس سپلائی کے ریسورس میں اضافہ نہ کیا گیا تو صارفین کی طرف سے پانی کی کمی کی شکایات میں اضافہ ہو گا۔ تاہم صارفین کی شکایات واسا افسران کی تجاویز کے باوجود ایم ڈی واسا نے موثر حکمت عملی نہ کی، جسکی وجہ سے رمضان المبارک کے دوران شہریوں کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی میں شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ شہریوں نے ارباب اختیار سے مطالبہ کیا ہے کہ رمضان المبارک میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے موثر اقدامات کئے جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں