31

پاکستان کو قرضوں اور سود کی ادائیگی کیلئے 3ارب ڈالر درکار

اسلام آباد(بیوروچیف)اسٹیٹ بینک کے تحت گھٹتے ہوئے زرمبادلہ ذخائر کے عین درمیان ملک کے بیرونی قرضوں اور ان پر سود کی ادائیگی کے لیے رواں مالی سال کی آخری سہ ماہی (اپریل تا جون)تین ارب ڈالرز درکار ہوں گے۔ ایک متعلقہ اہم پیش رفت کے تحت پاکستانی حکام نے چین کی جانب سے دو ارب ڈالرز سیف ڈپازٹ میں ملنے کی تصدیق کردی ہے ۔ گزشتہ 10مارچ تک پاکستان کے زرمبادلہ کا حجم 4ارب30کروڑ ڈالرز تھا ۔آئی ایم ایف اگر پاکستان کو قرضے کی قسط ادا کرنے میں لیت ولعل سے کام لیتا رہا تو مالی انتظام کے لیے پلان بی مرتب کرنا ہوگا ۔ رابطہ کرنے پر وزارت خزانہ کے ایک اعلی افسر نے کہا اگر پلان اے نے کام نہ کیا تو پلان بی مرتب کیا جائے گا۔ دستیاب تفصیلات کے مطابق پاکستان کو قرضوں اور سود کی مد میں ادائیگی کیلیے اپریل 2023 میں31کروڑ 60لاکھ ڈالرز ادا کرنے ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں